Akhtar Muslimi

Rookie - 446 Points (1/1/1928 to 25/06/1989 / Azamgarh)

Akhtar Muslimi Poems

1. کیوں کرے کوئی بہاروں میں نگہبانی مری 9/1/2015
2. کیا بتائیں کتنا لطفِ زندگی پاتا ہے دل 9/1/2015
3. تخلیقِ دو عالم ہے بفیضانِ محمدؐ 9/1/2015
4. اے دوست یہ باتیں تم شاید سمجھو نہ مرے سمجھانے سے 9/1/2015
5. کروں وصف کیا میں بیاں ترا تری شان جلّ جلالہٗ 9/1/2015
6. یہ ہمارا چمن ہے ہمارا چمن 9/1/2015
7. قیامت ہے بہار اب کے برس اپنے گلستاں کی 9/2/2015
8. اک حشر اضطراب سا قلب و جگر میں ہے 9/2/2015
9. صدقے تِری نظروں کے میرا دل بھی جگر بھی 9/2/2015
10. کیا کہوں دل مرا کس درجہ غنی ہے اے دوست 9/2/2015
11. ازل سے سرمشق جور پیہم خدنگ آفات کا نشانہ 9/2/2015
12. اے دلِ بے خبر ابھی کیا ہے 9/2/2015
13. حیات ایک تگ و دو کا نام ہے شاید 9/2/2015
14. ہم وہ ہیں جو طلب لذتِ غم کرتے ہیں 9/2/2015
15. ہر شب تارِ خزاں صبح بہاراں کردیں 9/8/2015
16. پیدا ابھی مذاق گلستاں نہ کرسکے 9/8/2015
17. جبیں اپنی کہیں خم ہو نہ جائے 9/8/2015
18. آئینِ جفا ان کا سمجھے تھے نہ ہم پہلے 9/8/2015
19. نہاں ہے خوئے صیّادی ہمارے باغبانوں میں 9/8/2015
20. مل ہی جائے گا کوئی کنارا مجھے 9/8/2015
21. دل کوئی سہارا اب لے کر شرمندئہ احساں کیا ہوگا 9/15/2015

Comments about Akhtar Muslimi

There is no comment submitted by members..
Best Poem of Akhtar Muslimi

کیا بتائیں کتنا لطفِ زندگی پاتا ہے دل

کیا بتائیں کتنا لطفِ زندگی پاتا ہے دل
جب نگاہِ ناز تیری زد پہ آجاتا ہے دل
کون ہے غم خوار اپنا شامِ غم اے بے کسی
دل کو بہلاتا ہوں میں یا مجھ کو بہلاتا ہے دل
آ کے ان کی یاد کچھ تسکین دیتی ہے مجھے
جب شبِ فرقت کی تنہائی میں گھبراتا ہے دل
ہائے وہ منظر نہ پوچھو جب بحسنِ اتفاق
ملتی ہیں نظروں سے نظریں دل سے مل جاتا ہے دل
کیوں نہ سمجھوں آپ کو میں سو بہاروں کی بہار
سامنے جب آپ آتے ہیں تو کھِل جاتا ہے دل
کوئی جادہ ہے، نہ منزل ہے، نہ کچھ قیدِ مقام
اپنی دھن میں اک طرف مجھ کو لیے جاتا ہے دل
جانے کیوں اخترؔ مری آنکھوں میں آجاتے ہیں اشک
جب وہ رنگیں داستاں ماضی کی دہراتا ...

Read the full of کیا بتائیں کتنا لطفِ زندگی پاتا ہے دل
[Report Error]