Akhtar Muslimi

Rookie - 446 Points (1/1/1928 to 25/06/1989 / Azamgarh)

قیامت ہے بہار اب کے برس اپنے گلستاں کی - Poem by Akhtar Muslimi

قیامت ہے بہار اب کے برس اپنے گلستاں کی
گلوں میں کیفیت پیدا ہوئی خارِ بیاباں کی
جو باہم عندلیبانِ چمن دست و گریباں ہیں
تو ایسی کشمکش میں فکر ہے کس کو گلستاں کی
رہا اب اور کیا باقی زوالِ آدمیّت میں
کہ طینت ہوگئی ہے، مائلِ تخریب انساں کی
اگر ہے جذبئہ صادق تو کیا ڈر موجِ طوفاں سے
لگا دے گی کنارے خود ہی کشتی موجِ طوفاں کی
بہاروں میں کرے کوئی ہزار ان کی نگہ بانی
کہاں جاتی ہے دیوانوں سے خو چاکِ گریباں کی
مجھے جب درد ہی میں زندگی کا لطف ملتا ہے
تو پھر اے چارہ گر مجھ کو ضرورت کیا ہے درماں کی
بڑی مشکل سے اُف کم بخت دل کو چین آیا تھا
معاذ اللہ پھر یاد آگئی کس فتنہ ساماں کی
اندھیری رات میں ہے جگنوؤں کی روشنی کافی
غریبوں کی لحد پر کیا ضرورت ہے چراغاں کی
اسے اہلِ نظر کہتے ہیں توہینِ جنوں اخترؔ
کسے شوریدگی میں فکر ہوتی ہے گریباں کی

Qeyamat hai bahaar ab ke baras apne gulistaan ki
Gulon mein kaifiyat paida hui khaar-e-bayabaan ki
Jo baham andaleeban-e-chaman dast-o-gareeban hain
To aisi kashmakash mein fikr hai kisko gulistaan ki
Raha ab aur kya baaqi zawaal-e-admiyyat mein
Ki teenat ho gayi hai maaele takhreebe insaan ki
Agar hai jazba-e-saadiq to kya dar mauj-e-tufaan se
Laga degi kinare khud hi kashti mauj-e-tufaan ki
Baharon mein kare koi hazar unki nigahbani
Kahan jaati hai deewanon se khu chaak-e-gareeban ki
Mujhe jab dard hi mein zindagi ka lutf milta hai
To phir ai charah gar mujh ko zarurat kya hai darmaan ki
Badi mushkil se uff km bakht dil k o chain aya tha
Maaz Allah phir yaad agayi kis fitna saama ki
Andheri raat mein hai jugnuon ki roshni kaafi
Gareebon ki lahed par kya zarurat hai chiragaan ki
Ise ahl-e-nazar kahte hain tahueen-e-junoo Akhtar
Kise shoreedgi mein fikr hoti hai gareebaan ki

Topic(s) of this poem: poem

Form: Ghazal


Comments about قیامت ہے بہار اب کے برس اپنے گلستاں کی by Akhtar Muslimi

There is no comment submitted by members..



Read this poem in other languages

This poem has not been translated into any other language yet.

I would like to translate this poem »

word flags


Poem Submitted: Wednesday, September 2, 2015

Poem Edited: Wednesday, September 2, 2015


[Report Error]