Mazloom Gill


غمِ انساں - Poem by Mazloom Gill

وہاں دیکھو گرا ھے کوئی جیسے قسمت اسی کی ھے کھوئی
پاس جاتے ھیں انساں یہ گزرے گرنے والا انساں ھے کوئی
بھیڑ بکری نے مڑ کر ھے دیکھا کہیں ھو نہ ھم سے کوئی
سب ایسے ہی گزرے ھیں جاتے کھوٹہ سکہ گرا ھے کوئی
درد انساں سے مٹتا ہی جائے یہ میرا نہیں ھے اور کوئی
یہ کس کا لگے ھے پیارا کس کی قسمت یہاں پر ھے روئی
آنکھ اس کی ہی پتھرا گئی ھے دیکھ لے اس کو یہاں کوئی
جیسے انساں یہ نہیں ھے لوگو کوئی پتھر پڑا ھے کوئی
وہ ماں کا ھے دلدار بیٹا بیوی رو رو کے ہلکان ھوئی
بچے روتے ھوئے ھی آئے بہن اس کی جدائی میں روئی
درد ان کا نہ کوئی جانے مظلوم تیری کیوں رات روئی
وہاں دیکھو گرا ھے کوئی جیسے قسمت اسی کی ھے کھوئی

Topic(s) of this poem: poem

Form: ABC


Comments about غمِ انساں by Mazloom Gill

There is no comment submitted by members..



Read this poem in other languages

This poem has not been translated into any other language yet.

I would like to translate this poem »

word flags


Poem Submitted: Monday, November 13, 2017



[Report Error]